ناروے میں کرونا وائرس کے متعلق اردو میں معلومات

نارویجن حکام کی طرف سے ناروے میں کرونا وائرس کی صورتحال کے لیے اصولوں، ہدایات اور مشوروں کے متعلق اردو میں معلومات

ٹیسٹنگ اور علامات

کرونا وائرس کی علامات

کرونا وائرس کی علامات بخار، کھانسی، سانس لینے میں مشکل، سر میں درد، سستی، سونگھنے یا چکھنے کی حسّ میں کمی اور پٹھوں میں درد ہو سکتی ہیں۔ کچھ صورتوں میں گلے میں درد، ناک بہنے یا ناک بند ہونے اور چھینکیں آنے کی علامات بھی ہو سکتی ہیں۔

اگر آپ یقین سے نہ جانتے ہوں کہ آپ کی علامات کرونا وائرس ہیں یا نہیں تو آپ کو اپنا ٹیسٹ کروانا چاہیے۔

اگر مجھے علامات پیش ہوں تو مجھے کیا کرنا چاہیے؟

  • اگر آپ بیمار ہوں تو گھر میں رہیں۔
  • ان سب لوگوں کو اپنا ٹیسٹ کروانا چاہیے جنہیں کرونا وائرس کی علامات پیش ہوں۔
  • اگر آپ بیمار ہوں اور آپ کو ڈاکٹر کی مدد درکار ہو یا صحت کے لیے انفرادی مشورے کی ضرورت ہو تو اپنے فیملی ڈاکٹر سے فون پر یا الیکٹرانک ذریعے سے رابطہ کریں۔

ٹیسٹ کہاں کروایا جا سکتا ہے؟

ٹیسٹنگ کی ذمہ داری بلدیات پر ہے اور مختلف بلدیات میں ٹیسٹنگ کا نظام مختلف ہے۔ آپ جس بلدیہ میں رہتے ہیں، اس کی ویب سائیٹ پر پڑھ کر معلوم کریں کہ وہاں ٹیسٹنگ کا نظام کیا ہے۔

اپنی بلدیہ کی ویب سائیٹ یہاں دیکھیں

آپ کو کب ٹیسٹ کروانا چاہیے؟

وہ سب لوگ جنہیں خود کو COVID-19  انفیکشن ہونے کا شک ہو، انہیں اپنا ٹیسٹ کروانا چاہیے۔ ان کا ٹیسٹ ہونا چاہیے:

  • وہ سب لوگ جن میںCOVID-19   کی علامات ہوں اور وہ سب لوگ بھی جنہیں حال ہی میں نظام تنفّس کے انفیکشن کی علامات شروع ہوئی ہوں۔
  • وہ سب لوگ جوCOVID-19   کے کسی مریض کے قریبی کانٹیکٹ ہوں۔
  • ڈاکٹر کے غور کے بعد دوسرے گروہ۔

آپ کے لیے کب ٹیسٹ کروانا ضروری ہے؟

بعض حالات میں یہ ایک قانونی حکم ہے کہ آپ اپنا کرونا وائرس ٹیسٹ کروائیں۔ اس لیے مندرجہ ذیل لوگوں کا ٹیسٹ ہو گا:

  • وہ سب لوگ جو انفیکشن کوارنٹین میں ہیں اور جن میں COVID-19  کی علامات ظاہر ہوئی ہیں۔
  • ناروے آنے والے وہ سب لوگ جو پچھلے 10 دنوں میں سرخ ممالک یا علاقوں میں وقت گزار چکے ہیں۔
  • وہ سب لوگ جو سفری کوارنٹین میں ہیں اور جن میںCOVID-19   کی علامات ظاہر ہوئی ہیں۔
  • وہ سب لوگ جو اپنی ناروے میں آمد سے پہلے کے 10 دنوں میں برطانیہ، جنوبی افریقہ، آئر لینڈ، ہالینڈ، آسٹریا، پرتگال یا برازیل میں وقت گزار چکے ہیں۔

جب آپ ٹیسٹ کے نتیجے کا انتظار کر رہے ہوں

عام اصول کے طور پر جس دوران آپ ٹیسٹ کے نتیجے کا انتظار کر رہے ہوں، آپ منفی نتیجہ آنے تک کوارنٹین میں رہیں گے۔

جس دوران آپ نتیجے کا انتظار کر رہے ہوں، آپ کے قریبی لوگوں کو کوارنٹین میں رہنے کی ضرورت نہیں ہے لیکن انہیں ترغیب دی جاتی ہے کہ وہ خود میں علامات کے حوالے سے ہوشیار رہیں۔

اگر آپ نے اس لیے ٹیسٹ کروایا ہے کہ آپ انفیکشن کوارنٹین میں ہیں اور آپ میں علامات ظاہر ہوئی ہیں تو آپ ٹیسٹ کا نتیجہ آنے تک آئسولیشن میں (سب سے الگ ہو کر) رہیں گے۔

کوارنٹین اور آئسولیشن

انفیکشن کوارنٹین

جس شخص کو انفیکشن کی تصدیق ہو جائے، اس کے سب قریبی کانٹیکٹس کو اس وقت کے بعد سے 10 دن تک کوارنٹین میں رہنا ہو گا جب پہلے شخص کو انفیکشن ہوا۔ انفیکشن کوارنٹین میں موجود افراد کو اپنا ٹیسٹ کروانا چاہیے۔ اگر آپ قریبی کانٹیکٹ ہیں تو انفیکشن ٹریسنگ کا عملہ آپ سے رابطہ کرے گا اور بتائے گا کہ آپ کے لیے کیا ہدایات ہیں۔

آپ تب قریبی کانٹیکٹ قرار پاتے ہیں جب مصدقّہ انفیکشن میں مبتلا شخص کو انفیکشن کی اولّین علامات پیش آنے سے پہلے کے 48 گھنٹوں میں

  • آپ 15 منٹ سے زیادہ وقت کے لیے اس شخص سے 2 میٹر سے کم فاصلے پر رہے ہوں، یا
  • آپ کا اس سے براہ راست جسمانی واسطہ رہا ہو، یا
  • آپ کا اس کی جسمانی رطوبتوں (جیسے تھوک، ناک کے مواد اور آنسو)  سے براہ راست واسطہ رہا ہو

اگر مصدقّہ انفیکشن میں مبتلا شخص کو علامات پیش نہ ہوں تو مثبت ٹیسٹ لیے جانے سے پہلے کے 48 گھنٹوں کے حوالے سے آپ کو قریبی کانٹیکٹ قرار دیا جاتا ہے۔

انفیکشن کوارنٹین پوری کرنے کا طریقہ کیا ہے

اگر آپ انفیکشن کوارنٹین میں ہیں تو آپ:

  • اپنے گھر میں یا کسی اور مناسب قیامگاہ میں رہیں گے۔ مناسب قیامگاہ سے مراد یہ ہے کہ گھر میں دوسرے بالغوں سے واسطے سے بچنا ممکن ہونا چاہیے، آپ کے پاس الگ کمرہ، الگ غسلخانہ اور الگ باورچی خانہ یا کھانا منگوانے کا انتظام ہونا چاہیے۔ نیچے پیراگراف میں مزید تفصیلی معلومات پڑھیں۔
  • گھر میں رہنے والے دوسرے بالغوں سے زیادہ فاصلہ رکھیں۔
  • کام پر، سکول یا چھوٹے بچوں کے نگہداشتی ادارے میں نہ جائیں۔
  • ملک کے اندر سفر نہ کریں۔
  • ایسی جگہوں پر نہ جائیں جہاں دوسرے لوگوں سے ضروری فاصلہ رکھنا مشکل ہو۔
  • پبلک ٹرانسپورٹ استعمال نہ کریں۔
  • دکانوں، فارمیسی اور کیفے جیسے عوامی مقامات پر نہ جائیں۔ اگر آپ کے پاس کوئی دوسرا حل نہ ہو تو آپ ضروری کام کے لیے دکان یا فارمیسی پر جا سکتے ہیں۔ دوسرے لوگوں سے خوب فاصلہ ضرور رکھیں۔
  • ملاقاتیوں کو اپنے یہاں نہ آنے دیں۔ بچے گھر میں موجود ساتھیوں کے علاوہ کسی کے ساتھ نہیں کھیلیں گے۔

آپ باہر پیدل چلنے جا سکتے ہیں لیکن دوسروں سے خوب فاصلہ رکھیں۔ بچوں اور نوجوانوں کو کھیل کا موقع ملنا چاہیے اور اس بات کے لیے حوصلہ افزائی کی جاتی ہے کہ دن میں کم از کم ایک بار بچوں کے ساتھ باہر کھیلنے جائیں۔

بنیادی نقطہ یہ ہے کہ آپ خود میں علامات ظاہر ہونے سے پہلے کہیں آپ دوسروں کو انفیکشن نہ لگا دیں۔

کوارنٹین کے عرصے میں مناسب قیامگاہ

آپ اپنے گھر یا کسی اور مناسب قیامگاہ میں کوارنٹین کا عرصہ پورا کریں گے۔ دوسرے لوگوں سے واسطے سے بچنا ممکن ہونا چاہیے اور آپ کے پاس الگ کمرہ، الگ غسلخانہ اور الگ باورچی خانہ یا کھانا منگوانے کا انتظام ہونا چاہیے۔

ایسے مقامات کو کوارنٹین کے مقام کے طور پر قبول نہیں کیا جاتا جہاں آپ کو اپنے قریبی افراد کےعلاوہ دوسروں کے ساتھ مل کر ٹائلٹ، باورچی خانہ یا دوسرے کمرے یا سہولیات استعمال کرنی پڑیں۔ اس کی مثالیں کیمپنگ کاروان یا ٹریلر، خیمہ یا کیمپنگ ایریا میں کاٹیج، ہاسٹل اور مشترکہ غسلخانے یا باورچی خانے والی دوسری رہائشگاہیں ہیں۔

سفری کوارنٹین

یورپیئین اکنامک ایریا/سوئٹزرلینڈ کے سرخ ممالک یا علاقوں یا یورپیئین اکنامک ایریا/سوئٹزرلینڈ سے باہر کے ممالک سے آنے والے سب لوگوں کو ناروے آنے کے دن کے بعد سے 10 دن تک کوارنٹین میں رہنا ہو گا۔ اسے سفری کوارنٹین کہا جاتا ہے۔ ان ممالک اور علاقوں کا پتہ چلانے کے لیے نارویجن انسٹی ٹیوٹ آف پبلک ہیلتھ کی فہرست دیکھیں۔

کوارنٹین کے حکم کی خلاف ورزی ایک قابل سزا جرم ہے۔

سفری کوارنٹین کہاں پوری کی جائے گی

آپ سفری کوارنٹین ان جگہوں پر پوری کر سکتے ہیں:

  • ناروے میں مستقل رہائشگاہ میں، چاہے یہ آپ کی ملکیتی رہائشگاہ ہو یا کرایے کی۔ آپ کو کرایہ داری یا ملکیت کا ثبوت دینے کے قابل ہونا چاہیے۔ کیمپنگ کاروان، کشتیوں وغیرہ جیسی موبائل قیامگاہوں کو قبول نہیں کیا جاتا
  • کوارنٹین ہوٹل میں

اگر آپ اپنے گھر کے علاوہ کسی اور جگہ پر کوارنٹین پوری کر رہے ہوں تو آپ کو یہ تصدیق نامہ پیش کرنا ہو گا کہ آپ کی قیامگاہ مطلوبہ تقاضے پورے کرتی ہے اور یہ تصدیق آپ اس سفری رجسٹریشن کے فارم میں کریں گے جو ناروے میں داخل ہونے سے پہلے بھرا جاتا ہے۔

سفری کوارنٹین پوری کرنے کا طریقہ کیا ہے

کوارنٹین کا عرصہ ناروے میں آمد کے بعد سے 10 دن ہے۔

جب آپ کوارنٹین میں ہوں تو ضروری ہے کہ:

  • آپ اوپر بتائی گئی جگہوں میں سے کسی جگہ پر رہیں
  • کام پر، سکول یا چھوٹے بچوں کے نگہداشتی ادارے میں نہ جائیں
  • ملک کے اندر سفر نہ کریں
  • ایسی جگہوں پر نہ جائیں جہاں دوسرے لوگوں سے ضروری فاصلہ رکھنا مشکل ہو
  • پبلک ٹرانسپورٹ استعمال نہ کریں (سوائے اس وقت کے جب آپ بیرون ملک سے آمد کے بعد کوارنٹین کے مقام پر جا رہے ہوں یا کوارنٹین مکمل کرنے سے پہلے ناروے سے جانے کے لیے نکل رہے ہوں۔ ان مواقع پر 12 سال سے زیادہ عمر کے افراد چہرے پر ماسک پہنيں گے۔)
  • دکانوں، فارمیسی اور کیفے جیسے عوامی مقامات پر نہ جائیں۔ اگر آپ کے پاس کوئی دوسرا حل نہ ہو تو آپ ضروری کام کے لیے دکان یا فارمیسی پر جا سکتے ہیں۔ دوسرے لوگوں سے خوب فاصلہ ضرور رکھیں۔
  • ملاقاتیوں کو اپنے یہاں نہ آنے دیں۔ بچے گھر میں موجود ساتھیوں کے علاوہ کسی کے ساتھ نہیں کھیلیں گے۔

آپ باہر پیدل چلنے جا سکتے ہیں لیکن دوسروں سے خوب فاصلہ رکھیں۔ بچوں اور نوجوانوں کو کھیل کا موقع ملنا چاہیے اور اس بات کے لیے حوصلہ افزائی کی جاتی ہے کہ دن میں کم از کم ایک بار بچوں کے ساتھ باہر کھیلنے جائیں۔

بنیادی نقطہ یہ ہے کہ اگر آپ علامات کے بغیر انفیکشن میں مبتلا ہیں تو کہیں آپ دوسروں کو انفیکشن نہ لگا دیں۔

آئسولیشن

اگر آپ کو COVID-19  ثابت ہوا ہے یا انفیکشن کوارنٹین میں رہنے کے دوران آپ میں علامات ظاہر ہو جائیں تو آپ کو آئسولیشن اختیار کرنی ہو گی۔

گھر میں آئسولیشن اختیار کرنے والوں کے لیے یہ اصول ہیں:

  • آپ کو تمام وقت گھر میں رہنا ہو گا لیکن آپ اپنے باغیچے یا اپنی بالکنی/ورانڈا/ٹیرس میں جا سکتے ہیں۔
  • باہر کے ضروری کاموں کے لیے آپ کو دوسرے لوگوں سے مدد لینی ہو گی۔
  • آپ کو اپنے ساتھ رہنے والوں سے کم از کم 2 میٹر کا فاصلہ رکھنا ہو گا۔
  • جہاں ممکن ہو، آپ کا کمرہ اور غسلخانہ الگ ہونا چاہیے۔ اپنے استعمال میں آنے والی چیزیں غسلخانے میں دوسروں کی چیزوں سے الگ رکھیں اور اپنا الگ تولیہ بھی رکھیں۔
  • آپ کو ہاتھوں کی صفائی اور کھانستے ہوئے حفظان صحت کا بہت خیال رکھنا ہو گا تاکہ گھر میں دوسرے لوگوں کو انفیکشن نہ لگے۔
  • گھر کی صفائی کثرت سے کریں، خاص طور پر ان جگہوں کی صفائی کریں جنہیں آپ لوگ اکثر چھوتے ہیں۔

آئسولیشن کے لیے مناسب قیام گاہ

آپ کو اپنے گھر میں، مناسب قیامگاہ میں یا بعض صورتوں میں صحت کے ادارے میں آئسولیشن میں رہنا ہو گا۔

یہ بلدیہ کی ذمہ داری ہے کہ آپ کے پاس آئسولیشن پوری کرنے کے لیے مناسب جگہ ہو۔ اگر بلدیہ کی رائے میں آپ گھر میں آئسولیشن پوری نہ کر سکتے ہوں تو بلدیہ آپ کو ہوٹل یا کسی اور مناسب جگہ پر قیام کی پیشکش کرے گی۔ بلدیہ یہ فیصلہ بھی کر سکتی ہے کہ انفیکشن میں مبتلا شخص جن لوگوں کے ساتھ رہتا ہے، وہ لوگ کسی مناسب قیامگاہ میں رہیں گے۔ دونوں صورتوں میں اخراجات بلدیہ اٹھائے گی۔

بلدیہ یقینی بنائے گی کہ جو لوگ کوارنٹین ہوٹل میں سفری کوارنٹین میں ہوں، انہیںCOVID-19  انفیکشن کی تصدیق ہونے پر حتی الوسع جلد ایسی مناسب قیامگاہ ملے جہاں وہ آئسولیشن پوری کریں۔

آئسولیشن ختم کرنا

آپ علامات شروع ہونے کے بعد سے 10 دن پورے ہونے پر، اور اپنا بخار ختم ہوئے کم از کم 24 گھنٹے گزر جانے پر، آئسولیشن ختم کر سکتے ہیں۔ ہسپتال میں موجود افراد یا جن افراد کو مدافعتی نظام کمزور کرنے والا علاج مل رہا ہو، ان کے لیے زیادہ لمبی آئسولیشن لازمی ہو سکتی ہے۔

اگر آپ میں علامات ظاہر نہ ہوں تو آپ اس وقت کے بعد سے 10 دن گزر جانے پر آئسولیشن ختم کر سکتے ہیں جب آپ کا کرونا وائرس ٹیسٹ مثبت آیا تھا۔

سفر

بیرون ملک جانا اور بیرون ملک سے آنا

اندرون ملک

اندرون ملک تمام غیر ضروری سفر سے گریز کا مشورہ دیا جاتا ہے۔ اس مشورے کی وجہ یہ ہے کہ اگر آپ ناروے میں زیادہ انفیکشن والے علاقوں سے کم انفیکشن والے علاقے میں جائیں تو انفیکشن پھیلنے کا خطرہ ہے۔

متوجہ رہیں کہ آپ جس بلدیہ میں جا رہے ہوں، وہاں مقامی اقدامات واجب ہو سکتے ہیں، اس لیے سفر سے پہلے اس بلدیہ کی ویب سائیٹ دیکھ لیں۔ یہ بھی سوچ لیں کہ اگر آپ بیمار ہو گئے اور آپ کو آئسولیشن اختیار کرنی پڑی یا کوارنٹین میں جانا پڑا تو آپ کیا کریں گے۔

گھر میں ملاقاتیوں کی آمد

سب لوگوں کو رو برو سماجی واسطہ حتی الوسع کم رکھنا چاہیے۔ آپ جن لوگوں کے ساتھ گھر میں رہتے ہیں، ان کے علاوہ آپ کے گھر میں 5 سے زیادہ مہمان نہیں ہونے چاہیئں۔ کسی بھی صورت میں گھر میں اتنے زیادہ لوگ نہیں ہونے چاہیئں کہ فاصلہ نہ رکھا جا سکے۔

ملاقات کے سلسلے میں مشورے میں دو استثنا ہیں:

  • اگر سب مہمان ایک ہی گھر سے آ رہے ہوں تو اس گھر کے تمام لوگ ملاقات کے لیے آ سکتے ہیں
  • اگر تمام مہمان بارنے ہاگے یا پرائمری سکول کے ایک ہی درجے یا کلاس کے ہوں۔

آپ کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے کہ اگر ممکن ہو تو باہر کھلی جگہ پر ملیں۔

رشتہ داروں اور دوستوں سے رابطے میں رہیں۔ روبرو ملاقات کی بجائے سماجی تعلق کے دوسرے طریقے تلاش کریں تو اچھا ہو گا۔

نجی میل جول اور پروگرام

پروگراموں اور نجی میل جول کو ملتوی یا منسوخ کر دینا چاہیے۔

عوامی مقام (کرایے کا ہال یا مفت ملنے والا ہال وغیرہ) پر نجی میل جول کی صورت میں 10 سے زیادہ افراد کے اکٹھے ہونے کی اجازت نہیں ہے۔ کھلی جگہوں پر میل جول کے لیے 20 افراد اکٹھے ہو سکتے ہیں۔

عمارتوں کے اندر عوامی پروگرام

عوامی مقام پر عمارت کے اندر پروگرام میں، جہاں سیٹیں مقرّر اور بتائی گئی نہ ہوں، زیادہ سے زیادہ 10 افراد اکٹھے ہو سکتے ہیں۔

عوامی مقام پر عمارت کے اندر پروگرام میں، جہاں سیٹیں مقرّر اور بتائی گئی ہوں، زیادہ سے زیادہ 100 افراد اکٹھے ہو سکتے ہیں۔

عوامی مقام پر عمارت کے اندر پروگرام کی مثالیں سینما، تھیٹر، سیمینار یا مذہبی تقریب ہو سکتی ہیں۔

بچوں کے لیے عمارت کے اندر پروگرام میں جہاں ایک ہی بلدیہ کے لوگ اکٹھے ہو رہے ہوں، زیادہ سے زیادہ 50 افراد کی اجازت ہے۔

مقرّر، بتائی گئی سیٹوں کا مطلب یہ ہے کہ حاضرین پورے پروگرام کے دوران کرسی، بنچ وغیرہ پر یا فرش پر ایک ہی جگہ پر بیٹھے رہیں۔

تدفین و جنازہ

عمارت کے اندر تدفین و جنازہ میں زیادہ سے زیادہ 100 افراد اکٹھے ہو سکتے ہیں جو رسم کے دوران مقرّر، بتائی گئی سیٹوں پر بیٹھیں گے۔

کھلی جگہوں پر عوامی پروگرام

کھلی جگہ پر عوامی پروگرام میں جہاں مقرّر اور بتائی گئی سیٹیں نہ ہوں، 200 افراد کے شریک ہونے کی اجازت ہے۔

جہاں مقرّر اور بتائی گئی سیٹیں ہوں، وہاں 600 تک افراد کے شریک ہونے کی اجازت ہے۔ منتظم کو یقینی بنانا ہو گا کہ شرکاء کو 200 افراد تک کے الگ الگ گروپوں میں رکھا جائے۔ مختلف گروپوں کے درمیان تمام وقت کم از کم 2 میٹر فاصلہ رہنا ضروری ہے۔

200 افراد کے گروپ کے اندر تمام افراد کے درمیان کم از کم 1 میٹر کا فاصلہ رہنا ضروری ہے۔

روزگار کے مقامات، سکول اور تعلیم

روزگار کے مقامات

  • ان سب لوگوں کو گھر سے کام کرنے کا مشورہ دیا جاتا ہے جن کے لیے یہ ممکن ہے۔

روزگار کے سلسلے میں سفر کے اصول پڑھیں۔

چھوٹے بچوں کے نگہداشتی ادارے

  • چھوٹے بچوں کے نگہداشتی ادارے پیلی سطح پر ہیں
  • جن بلدیات میں انفیکشن زیادہ ہے، وہ سکولوں اور چھوٹے بچوں کے نگہداشتی اداروں میں سرخ سطح برقرار رکھنے پر غور کر سکتی ہیں۔

سکول اور تعلیم

  • ہائی سکول اور اپر سیکنڈری سکول پیلی سطح پر ہیں۔
  • جن بلدیات میں انفیکشن زیادہ ہے، وہ سکولوں اور چھوٹے بچوں کے نگہداشتی اداروں میں سرخ سطح برقرار رکھنے پر غور کر سکتی ہیں۔